746

انفارمیشن پارٹ ون تعزیرات پاکستان کی دفعات کے معنی جانیں اور ان کی سزا * دفعہ 324 قتل کی کوشش کی سزا * دفعہ 302 * = قتل کی سزا

کیانفارمیشن
پارٹ ون

تعزیرات پاکستان کی دفعات کے معنی جانیں اور ان کی سزا

* دفعہ 324 قتل کی کوشش کی سزا

* دفعہ 302 * = قتل کی سزا

* دفعہ 376 * = زنا بالجبر کی سزا

378

سرقہ کی تعریف

379
عام چوری کی
سزا

380

رہائشی گھر میں سے چوری کرنے کی سزا

457/380

رہائشی گھر میں سے رات کو نقب زنی کرنے کی سزا

454/380

رہائشی گھر میں سے دن کو نقب زنی کے ذریعے
چوری کرنے کی سزا

458
ضرر حملہ یا مزاحمت بجا بخانہ کی تیاری کے بعد مخفی مداخلت بے جا بخانہ یا
نقب زنی بوقت شب کرنے کی سزا

459

مخفی مداخلت یا بجا بخانہ یا نقب زنی کے دوران کسی شخص کو ضرر شدید شدید پہنچانے کی سزا

460

مداخلت بجا یا نقب زنی بوقت شام میں مشترکہ طور پر تمام اشخاص قابل سزا ہیں
اگر ان میں سے کسی ایک کا ہلاکت کا باعث بننے کی سزا

381

اگر کوئی نوکر چوری کرے تو اس کی سزا

381 اے

سرقہ ویکل یا ٹرانسفر یا بجلی کی موٹر چوری کرنے کی سزا
382

سرقہ کا ارتکاب کرنے کی نیت سے ہلاک کرنے یا ضرر پہنچانے یا مزاحمت کرنے کی تیاری کے بعد سرقہ کرنا کی سزا
392

سرقہ بالجبر کی سزا
393

اقدام سرقہ بالجبر کی سزا

394

سرقہ بالجبر کے دوران کسی آدمی کو زخمی کرنے کی سزا

396

ڈکیتی کے دوران کسی آدمی کو قتل کرنے کی سزا
397
ڈکیتی یا سرقہ بالجبر کے دوران آتشی اسلحہ ملک ہتھیار سے کسی شخص کو زخمی کرنا کی سزا

398

اقدام ڈکیتی یا اقدام سرقہ بلجبر آتشیں اسلحہ سے کرنے کی سزا

* دفعہ 377 * =
انسان یا جانور کے ساتھ بدفعلی کرنے کی سزا

377 بی

نابالغ بچہ یا بچی سے غیر فطری حرکتیں کرنا

367 اے

کسی شخص کو غیر فطری فعل کی نیت سے اغواء کرکے لے جانا کی سزا

* دفعہ 120 * = سازش مجرمانہ کی سزا

342

تین دن تک حبس بے جا میں رکھنے کی سزا

343

تین دن سے زیادہ 9 دن تک حبس بجا میں رکھنے کی سزا

344

10 دن سے زیادہ حبس بجا میں رکھنے کی سزا

345

کسی ایسے شخص کو حبس بجا میں میں رکھنا جس کی رہائی کا حکم ہو چکا ہو کی سزا

* سیکشن 365 * =

کسی شخص کو حبس بجا میں رکھنے کی نیت سے اغوا کر کے نامعلوم جگہ پر منتقل کرنے کی سزا

365 بی

کسی عورت کو شادی کی نیت سے زبردستی اغوا کرنے کی سزا

496 اے

کسی عورت کو حبس بجا میں رکھنے کے لیے یا زنا کرنے کے لیے اغوا کرنے کی سزا

496 بی

زنا بالرضا کرنے کی سزا جو نہ قابل دست اندازی پولیس ہے
اس کا قلندرا بنے گا ایف آئی آر درج نہیں ہوگی

* دفعہ 201 * = ثبوت جرم کا خاتمہ کرنے کی سزا

* دفعہ 34 * =

چار ملزمان تک کا ارادہ کر کے کوئی جرم کرنا

148/149

پانچ یا پانچ سے زیادہ ملزمان کا مل کر کوئی جرم کرنا

411

چوری یا سرقہ بالجبر یاخیانت مجرمانہ کا مال مسروقہ برآمد ہونے کی سزا

* دفعہ 412 * =

ڈکیتی کا مال مسروقہ برآمد ہونے کی سزا
413

عادتا مال مسروقہ کا کاروبار کرنے کی سزا
414

مال مسروقہ کو چھپانے میں یا تلف کرنے یا ضائع کرنے میں مدد کرنا کی سزا

* دفعہ 378 * = چوری کرنا کی تعریف

* دفعہ 300 * =
قتل عمد کی تعریف

* دفعہ 325 * = اقدام خود کشی کرنے کی سزا

* دفعہ 351 * = حملہ کرنا

* دفعہ 354 * = خواتین سے دست درازی کرنا کی سزا

* دفعہ 362 * = اغوا کرنے کی تعریف
363 نابالغ شخص کو اغوا کرنے کی سزا
364
قتل عمد کی نیت سے لے بھاگنے یا اغوا کرنے کی سزا

*دفعہ 320* =
لائسنس کے ساتھ ایکسڈنٹ میں کسی کی موت واقع ہونا کی سزا
(قابلِ ضمانت)

,*دفعہ 322 = بغیر ڈرائیونگ لائسنس کے ساتھ ایکسیڈنٹ میں کسی کی موت واقع ہونا (نہ قابل ضمانت)

* دفعہ 415 * = دغا کی تعریف

* دفعہ 445 * =نقب زنی کی تعریف

* دفعہ 494 * = شریک حیات کی زندگی میں دوبارہ شادی کرنا کی کی سزا

* دفعہ 499 * = ہتک عزت کرنا کی تعریف

500 ازالہ عزت عرفی کی سزا
506 تخفیف مجرمانہ کی سزا

506 بی

اگر دھمکی ہلاکت یا ضرر شدید وغیرہ پہنچانے کے لیے دھمکی کی سزا

* دفعہ 511 * = اقدام جرم ثابت ہونے پر کی سزا۔

اس کے علاوہ
ہمارے ملک میں، قانون کے کچھ ایسے ہی حقائق موجود ہیں،

جس کی وجہ سے ہم واقف ہی نہیں ہیں،
ہم اپنے حقوق کا شکار رہتے ہیں۔

تو آئیے اس طرح کچھ کرتے ہیں

* پانچ دلچسپ حقائق *
آپ کو معلومات فراہم کرتے ہیں،

جو زندگی میں کبھی بھی کارآمد ثابت ہوسکتی ہے۔

* (1) شام کو خواتین کو گرفتار نہیں کیا جاسکتا * –

ضابطہ فوجداری کے تحت، دفعہ 46، شام 6 بجے کے بعد اور صبح 6 بجے سے قبل،
پولیس کسی بھی خاتون کو گرفتار نہیں کرسکتی،
چاہے اس سے کتنا بھی سنگین جرم ہو۔

اگر پولیس ایسا کرتی ہوئی پائی جاتی ہے تو گرفتار پولیس افسر کے خلاف شکایت (مقدمہ) درج کیا جاسکتا ہے۔

اس سے اس پولیس افسر کی نوکری خطرے میں پڑسکتی ہے۔

* (2.) سلنڈر پھٹنے سے جان و مال کے نقصان پر 40 لاکھ روپے تک کا انشورینس کا دعوی کیا جاسکتا ہے۔

عوامی ذمہ داری کی پالیسی کے
تحت، اگر کسی وجہ سے آپ کے گھر میں سلنڈر ٹوٹ جاتا ہے یا
پھٹ جاتا ہے

اور آپ کو جان و مال کے نقصان کا سامنا کرنا پڑتا ہے

، تو آپ فوری طور پر
گیس کمپنی سے انشورنس کور کا دعوی کرسکتے ہیں۔ آپ کو بتادیں کہ گیس کمپنی سے 40 لاکھ روپے تک کی انشورنس دعویٰ کیا جاسکتا ہے۔

اگر کمپنی آپ کے دعوے کو انکار کرتی ہے
یا ملتوی کرتی ہے تو پھر اس کی شکایت کی جاسکتی ہے
۔ اگر جرم ثابت ہوتا ہے تو ، گیس کمپنی کا لائسنس منسوخ کیا جاسکتا ہے۔

* (3) کوئی بھی ہوٹل چاہے وہ 5 ستارے ہو…
آپ مفت میں پانی پی سکتے ہیں
اور واش روم استعمال کرسکتے ہیں

سیریز ایکٹ، 1887 کے مطابق، آپ ملک کے کسی بھی ہوٹل میں جاکر پانی مانگ سکتے ہیں
اور اسے پی سکتے ہیں اور اس ہوٹل کے واش روم کا استعمال بھی کرسکتے ہیں۔
اگر ہوٹل چھوٹا ہے یا 5 ستارے، وہ آپ کو روک نہیں سکتے ہیں۔

اگر ہوٹل کا مالک یا کوئی ملازم آپ کو پانی پینے یا واش روم کے استعمال سے روکتا ہے تو آپ ان پر کارروائی کرسکتے ہیں۔

آپ کی شکایت کے سبب اس ہوٹل کا لائسنس منسوخ ہوسکتا ہے۔

* (4) حاملہ خواتین کو برطرف نہیں کیا جاسکتا * –

زچگی بینیفٹ ایکٹ 1961 کے مطابق
، حاملہ خواتین کو اچانک ملازمت سے نہیں ہٹایا جاسکتا۔

حمل کے دوران مالک کو تین ماہ کا نوٹس اور اخراجات کا کچھ حصہ دینا ہوگا۔

اگر وہ ایسا نہیں کرتا ہے تو پھر اس کے خلاف سرکاری ملازمت تنظیم میں شکایت درج کی جاسکتی ہے۔

یہ شکایت کمپنی بند ہونے کا سبب بن سکتی ہے

یا کمپنی کو جرمانہ ادا کرنا پڑ سکتا ہے۔

*(5) پولیس افسر آپ کی شکایت لکھنے سے انکار نہیں کرسکتا*

آئی پی سی کے سیکشن 166 اے کے مطابق
، کوئی بھی پولیس افسر آپ کی شکایات درج کرنے سے انکار نہیں کرسکتا ہے۔

اگر وہ ایسا کرتا ہے تو پھر اس کے خلاف سینئر پولیس آفس میں شکایت درج کی جاسکتی ہے۔

اگر پولیس افسر قصوروار ثابت ہوتا ہے تو، اسے کم سے کم * (6) * ماہ سے 1 سال قید ہوسکتی ہے یا پھر اسے اپنی ملازمت سے ہاتھ دھونے پڑ سکتے ہیں۔

یہ دلچسپ حقائق ہیں، جو ہمارے ملک کے قانون کے تحت آتے ہیں،

لیکن ہم ان سے لاعلم ہیں لہذا اس بندہ ناچیز نے آپ کے علم میں اضافہ کرنے کے لئے رپورٹ ترتیب بھی ہے پاٹون ختم ہوا ہے

پارٹ ٹو
آئندہ جاری کیا جائے گا

یہ خبر شیئر کریں

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں